میرے لیے حکومت چلانا مشکل نہیں آسان ہے،سردار عبدالقیوم نیازی

مظفرآباد()وزیراعظم آزادکشمیر سردار عبدالقیوم  نیازی نے کہا ہے کہ میرے لیے حکومت چلانا مشکل نہیں آسان ہے پریشانی ہے نہ مشکلات خاطر میں لاتا ہوں، سابقہ حکومت ہمارے لئے کانٹے ہی نہیں پوری پوری آبدوزیں بچھا کر گئی ہے،بیس کیمپ کو ریس کیمپ نہیں بننے دیں گے۔صحافیوں   سے بات چیت میں انہوں نے کہا کہ ہم نے شارٹ ٹرم مڈ ٹرم اور لانگ ٹرم پالیسی بنالی ہے۔ صدر ریاست فارن افیرز کے ماہر ہیں صدر جماعت کھاتے پیتے گھرانے سے ہیں مجھے ریاست کی ترقی اور عوام کی خدمت کرنی ہے۔جماعتیں برسراقتدار آتی ہیں تو ڈھانچہ بنا ہوتا ہے ہمیں ڈھانچہ بنانا پڑا ہے۔ ایس او پیز بنا دیے ہیں جانے والی حکومت ساڑھے چار ہزار ملازم مستقل کردیے اور ہر حلقہ میں 25کلومیٹر سڑک 750کلومیٹر سڑکیں دے گئے اور الیکشن کمیشن نے ٹینڈر روکے اور یہ عدالتوں میں  چلے گئے اور بیورو کریسی کو تبدیل کردیاجائے تو کہتے ہیں ظلم ہوگیا سب کو احتساب کے عمل سے گزرنا ہوگا۔بلدیاتی انتخابات کے حوالے سے کمیٹی کی رپورٹ ایک ماہ میں آجائے گی دیگرکمیٹیاں ایک ہفتے میں رپورٹ پیش کردیں گیں۔ انہوں نے کہاکہ 5سو ارب روپے کاتاریخی پیکج مل رہا ہے ہائیڈل شاہرات، ٹنلز. تعمیر سمیت تمام شعبوں پر فنڈز خرچ کریں گے،پڑھے لکھے نوجوانوں کو ہنرمند بنانے کے لئے ایک ارب روپے رکھے جارہے ہیں،۔5سو ارب کااعلان وزیراعظم پاکستان عمران خان اسمبلی اجلاس سے یا بڑے جلسے سے خطاب میں کریں گے۔ اس حوالے سے وفاقی وزیراسد عمر سے میٹنگ ہو چکی ہے۔انہوں نے کہاکہ ہفتہ صفائی مہم کے بعد دیگر صفائی بھی ہوگی مگر میں دلوں کی صفائی نہیں کرسکتا۔حکومتی زمینوں پرقبضہ کرنے والوں سمیت لوٹنے والوں کی بھی صفائی ہوگی۔ جانے والوں نے تو ایسا احتساب ایکٹ بنادیا ہے کہ احتساب ہو ہی نہیں سکتا۔ سابقہ حکومت میرے راستے میں کانٹے نہیں آبدوزیں چھوڑ گئی ہے۔ہمارا روڈ میپ عمران خان کاویژن ہے۔انہوں نے کہاکہ کشمیر میں زیادتی نہیں ظلم اور بربریت ہورہی ہے۔ عمران خان کی کشمیر پالیسی قابل رشک ہے ہرفورم پرکشمیریوں کی نمائندگی کی یو این او میں بھرپور نمائندگی کی افغانوں کے پاس کوئی بیس کیمپ نہیں تھا بلکہ جذبہ شہادت تھا کشمیر کے حوالے سے جو وزئیر بھیجا گیا اس میں تمام حقائق میں حکومت مضبوط نظر آئے گی۔ بلدیاتی انتخابات ضروری ہیں نوجوان قیادت سامنے آئے گی۔افواج پاکستان کی حوصلہ افزائی ضروری ہے  جو قربانیاں دے رہے ہیں ہم انہیں سلام پیش کرتے ہیں۔